20 C
Lahore
Monday, March 4, 2024

Book Store

ٹی ٹونٹی کرکٹ کی شروعات

The first T20 World Cup, was played in South Africa in 2007. Which was   won by India. It created a huge market for T20 on the subcontinent that was quickly exploited .

مختصر الفاظ میں اسے ٹی ٹونٹی کہا جاتا ہے۔ یہ کرکٹ کی کٹی ہوئی شکل ہے جس نے اس کھیل میں انقلاب برپا کر دیا جب اسے ۲۰۰۳ء میں قاعدے کی تبدیلیوں کے ساتھ متعارف کرایا گیا ۔جس نے کرکٹ کے لیے نئے ناظرین حاصل کرتے ہوئے ہٹ اور اسکورنگ پر ایک پریمیم رکھا۔

اصول اور تاریخ
اس کے بنیادی اصول وہی ہیں جو طویل ورژن کے لیے ہیں، لیکن اننگز ایک طرف ۲۰ اوورز تک محدود ہے (ایک اوور میں چھے گیندیں ہوتی ہیں جو بالر کے ذریعے مخالف وکٹ پر بلے باز کو پھینکی جاتی ہیں)۔

ہر کھلاڑی کے زیادہ سے زیادہ چار اوورز ہوتے ہیں۔فیلڈرز کی تعیناتی پر مختلف پابندیاں بلے بازوں کی طرف سے بڑی ہٹنگ اور اعلی اسکور کی حوصلہ افزائی کے لیے ڈیزائن کی گئی ہیں۔

کرکٹ کی یہ شکل تھوڑے ہی عرصے میں، کھیلوں کی دنیا میں سب سے مقبول اور منافع بخش شکل بن گئی۔ خاص طور پر بھارت میں، جہاں بہت زیادہ ہجوم انڈین پریمیئر لیگ کے میچوں میں شرکت کرتا ہے۔ لاکھوں لوگ ٹیلی ویژن پر یہ میچز دیکھتے ہیں۔
کرکٹ کی ایک اور مختصر شکل کو کرکٹ میکس کے نام سے جانا جاتا ہے۔ اسےنیوزی لینڈ میں ۱۹۹۰ء کی دہائی میں سابق ٹیسٹ بلے باز مارٹن کرو نے تیار کیا تھا، لیکن
سرکاری قوانین انگلینڈ اور ویلز کرکٹ بورڈ نے قائم کیے تھے۔ اس کا پہلا ٹورنامنٹ انگریزوں نے کھیلا تھا۔
اس فارمیٹ کو دوسرے ممالک نے تیزی سے اپنایا۔ دو سال بعد آسٹریلیا اور نیوزی لینڈ نے آکلینڈ میں ایک ہلکے پھلکے ٹی ٹونٹی میچ میں ایک دوسرے سے کھیلا، جو پہلا باضابطہ بین الاقوامی ٹی ٹونٹی میچ تھا۔

دونوں فریق ۱۹۸۰ء کی دہائی سے یونیفارم پہنتے اور (زیادہ تر جعلی) مونچھیں لگاتے تھے۔ یہ اسٹائل بہت جلد مقبول ہو گیا۔
ٹی ٹونٹی میں نئے، متحرک، نوجوان سامعین کو کرکٹ کی طرف راغب کرنے کی بہترین صلاحیت موجود ہے۔
پہلا ٹی ٹونٹی ورلڈ کپ، ۲۰۰۷ء میں جنوبی افریقہ میں کھیلا گیا تھا۔ یہ بھارت نے جیتا تھا۔ اس میچ نے برصغیر میں ٹی ٹونٹی کے لیے ایک بہت بڑی مارکیٹ بنائی تھی جس کا تیزی سے آئی پی ایل نے فائدہ اُٹھایا۔

اس کے بعد کے ورلڈ کپ مختلف کرکٹ کھیلنے والے ممالک میں کھیلے گئے۔ اس میں ویسٹ انڈیز نے سب سے زیادہ ٹائٹل اپنے نام کیے (دو)۔
کرکٹ کے ہر بڑے ملک نے اپنے ڈومیسٹک ٹی ٹونٹی ٹورنامنٹ تیار کیے، اور چیمپئنز لیگ کا مقابلہ بہترین کلبوں کے درمیان جیسا کہ یورپی فٹ بال (ساکر) میں ہوتا ہے ۔ ہر ٹی ٹونٹی سیزن کے اختتام پر منعقد ہوتا ہے۔

اپنے چیئر لیڈرز، اونچی آواز میں موسیقی، اور تیز تفریح کے ساتھ، ٹی ٹونٹی کو اکیسویں صدی میں کرکٹ کی بحالی کا سہرا دیا گیا۔

ابتدائی شکوک و شبہات کے بعد، کھلاڑیوں نے ٹی ٹونٹی کے ذریعے مانگی جانے والی نئی مہارتوں میں مہارت حاصل کرنا شروع کر دی اور اپنی فیلڈنگ، پھینکنے اور فٹنس کو بہتر بنانا شروع کیا۔ تاہم، روایتی کرکٹ کے پیروکاروں کو خدشہ تھا کہ ٹی ٹونٹی سے ٹیسٹ کرکٹ کے مستقبل کو خطرہ لاحق ہو جائے گا، جسے کھیل کی خالص ترین اور سب سے پیچیدہ شکل سمجھا جاتا ہے۔
٭٭٭

#Australia #won the T20 #World #Cup on Sunday with an 8 #wicket #victory over #New #Zealand. This was #Australia’s first world #title in #cricket’s #shortest #format and added to their #bulging #cupboard of #ICC #trophies which also includes five 50-over World Cups and two #Champions #Trophy titles.

Related Articles

Stay Connected

2,000FansLike
2,000FollowersFollow
2,000SubscribersSubscribe
گوشۂ خاصspot_img

Latest Articles

Ads Blocker Image Powered by Code Help Pro

Ads Blocker Detected!!!

We have detected that you are using extensions to block ads. Please support us by disabling these ads blocker.

Powered By
100% Free SEO Tools - Tool Kits PRO